ڈیرن گف نے پاکستانی کھلاڑیوں کی تعریف میں کیا کہا؟

ڈیرن گف نے پاکستانی کھلاڑیوں کی تعریف میں کیا کہا؟

لاہور: انگلینڈ کے سابق کھلاڑی ڈیرن گف نے پاکستانی کھلاڑیوں کی تعریف کردی۔

تفصیلات کے مطابق کرکٹ کے حوالے سے پاکستان کی سب سے بڑی ویب سائٹ www.cricketpakistan.com.pk کو دیے گئے خصوصی انٹرویو میں یارکشائرکاؤنٹی کے منیجنگ ڈائریکٹر ڈیرن گف نے کہا کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کے بولر شاہین شاہ آفریدی شاندار صلاحیتوں کے حامل بولر ہیں، لاہور قلندرز کی قیادت بھی ان کیلیے خوشگوار تجربہ رہی۔

انہوں نے کہا کہ شاہین آفریدی نے انتہائی پْرجوش انداز میں فرنچائز ٹیم کی ذمہ داری سنبھالی، یقینی طور پر مستقبل میں وہ پاکستانی ٹیم کے بھی کپتان بنیں گے، اُن میں صلاحیت ہے کہ وسیم اکرم کی طرح طویل عرصے تک پاکستان کیلیے پرفارم کرسکیں۔

ڈیرن گف نے قومی ٹیم کے ایک اور کھلاڑی حارث رؤف کے بارے میں کہا کہ وہ یارکشائر کے اسکواڈ میں اچھا اضافہ ثابت ہوئے، ان کی کارکردگی واقعی قابل ستائش ہے، پیسر کا طویل فارمیٹ میں تجربہ زیادہ نہیں مگر ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں انھوں نے لاہور قلندرز، میلبورن اسٹارز اور ورلڈکپ میں پاکستان کیلیے بھی زبردست پرفارم کیا، میں یارکشائر کیلیے ان کی دستیابی کا خواہاں تھا۔

انہوں نے حارث رؤف کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ حارث رؤف نے یاکشائر میں اپنے انتخاب کو درست ثابت کیا، ساتھی کرکٹرز بھی حارث کے گرویدہ ہیں، انھوں نے بہت جلد ہمارے ماحول سے مطابقت پیدا کرلی اورفلیٹ پچز پر بھی زبردست پرفارم کیا، کینٹ کیخلاف شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے پہلی اننگز میں 5شکار بھی کیے، ٹی ٹوئنٹی بلاسٹ میں یارکشائر کو حارث رؤف کے ساتھ شاداب خان کی خدمات بھی حاصل ہوں گی۔

اُن کا کہنا تھا کہ پاکستانی کپتان بابر اعظم غیر معمولی صلاحیتوں کے مالک بیٹر ہیں، وہ تینوں فارمیٹس میں بہترین انداز میں اننگز کو آگے بڑھاتے ہیں، البتہ رواں سال پی ایس ایل 7 کراچی کنگز کیلیے اچھی نہیں رہی، اگر دنیا کے بہترین بیٹرز کا ذکر ہو تو کین ولیمسن، ویراٹ کوہلی،جو روٹ اور بابر اعظم کے نام ذہن میں آتے ہیں،ٹاپ پوزیشن کیلیے ان چاروں میں ہی مقابلہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ویرات کوہلی کو کشمیر پریمیئر لیگ میں شرکت کی دعوت دینے کا فیصلہ

مزید برآں انگلینڈ کے سابق کھلاڑی نے دیگر ٹیموں کوخبردار کرتے ہوئے کہا کہ ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ میں پاکستان کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔

میگا ایونٹ کیلیے فیورٹ ٹیموں کے سوال پر انھوں نے کہا کہ انگلینڈ کے پاس ٹی ٹوئنٹی کرکٹ کا بہترین ٹیلنٹ ہے، پول میں 24کے قریب کرکٹرز اس فارمیٹ میں پرفارم کرنے کی بھرپور صلاحیت رکھتے ہیں، ہوم کنڈیشنز میں آسٹریلوی ٹیم بھی مضبوط حریف ثابت ہوگی۔

دوسری جانب پاکستان اور بھارت کی ٹیموں کو کسی بھی میگا ایونٹ میں نظر انداز نہیں کیا جاسکتا، دونوں میگا ایونٹس کے بڑے چیلنجز میں اْبھر کر سامنے آتی ہیں، ان کو ہرانا آسان نہیں ہوتا۔

تبصرے: 0

آپ کا ای میل پتہ شائع نہیں کیا جائے گا۔ مطلوبہ فیلڈز * کے ساتھ نشان زد ہیں