کمیشن نہ بڑھانے کی وجہ سے 5نومبر سے پٹرول پمپ بند کرنے کا اعلان

کمیشن نہ بڑھانے کی وجہ سے 5نومبر سے پٹرول پمپ بند کرنے کا اعلا ن

کراچی:پاکستان پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین عبدالسمیع خان نے اعلان کیا ہے کہ حکومت مسلسل پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں  میں  اضافہ کررہی ہے،اور ڈیلرز کے کمیشن میں طے شدہ اضافہ گزشتہ 17برس سے نہیں کیا جارہا ہے، حکومت کے ساتھ 3نومبر کو اسلام آباد میں اجلاس ہے جس میں کمیشن نہ بڑھایا گیا تو 5نومبر سے ملک بھر میں پٹرول پمپ بند کر دیئے جائیں  گے۔

پاکستان پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین عبدالسمیع خان نے کہا کہ ہم عرصہ دراز سے کوششیں  کررہے ہیں کہ ہمارا مارجن بڑھایا جائے تاہم حکومت اور وزارت پٹرولیم اس پر توجہ ہی نہیں دے رہی، جس کی وجہ سے ہم مجبور ہو ہر احتجاج کرنے کا قانونی، اخلاقی اور شرعی حق استعمال کر رہے ہیں  ۔وزارت پڑولیم سمیت ہماری کہیں  بھی شنوائی نہیں  ہو رہی ہے۔

پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے مذیدکہا کہ حیرت کی بات ہے کہ ایک جانب حکومت پاکستان دو ماہ کے دوران 4سے5مرتبہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کر چکی ہے جب کہ دوسری جانب پٹرولیم ڈیلرز کے کمیشن کو نہیں بڑھایا جارہا۔حکومت نے ہمارے ساتھ 5فیصد کمیشن بڑھانے کاوعدہ کیا تھا جس پر عمل درآمد نہیں کیا گیا۔موجودہ حالات میں ہر چیز کی قیمت میں کئی گنا اضافہ ہو چکا ہے۔

کمیشن بڑھانے کے حوالے سے انہوں  نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں  میں  اضافے کی وجہ سے ہمارے روز مرہ کے اخراجات میں  اضافہ ہو چکا ہے، بجلی کے بل بڑھ گئے ہیں، ملازمین کی تنخواہوں میں کم سے کم ویج بورڈنے اضافہ کر دیا ہے۔

سوشل سیکورٹی نے کنٹری بیوشن بڑھا دیا ہے، ایمپلائز اولڈ ایج بینیفٹ انسٹیٹیوشن (ای او بی آئی)نے بھی کنٹری بیوشن بڑھا دیا ہے، ورکر ویلفیئر بورڈ نے بھی فنڈز بڑھا دیئے ہیں گورنمنٹ کی سالانہ فیسیں  بڑھ چکی ہیں، سیلز ٹیکس اور لوکل ٹیکسز بڑھ گئے مگر 2004سے اب تک ہمارا کمیشن نہ بڑھ سکا۔

پٹرول پمپ مالکان نے مطالبہ کیا کہ حکومت کم از کم کمیشن میں  6فیصد اضافہ کرے اور یہ اضافہ رواں ماہ سے نافذ العمل کیا جائے اور یہ اضافہ کرنے کے لئے کسی بھی قسم کا نیا ٹیکس عوام پر نہ لگائے نہ ہی پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ کرکے ہمار ا کمیشن بڑھایا جائے بلکہ ٹیکسز کی مد میں کمی کرکے ہمارامارجن بڑھایا جائے تاکہ عوام کے لئے مسائل مذید نہ بڑھیں، حکومت لیوی اور سیلز ٹیکس کمی کرے۔

پریس کانفرنس میں یہ بھی مطالبہ کیا گیا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کا تعین ماہانہ بنیادوں  پر کیا جائے تاکہ ملک بھر میں پٹرولیم مصنوعات کی بلا تعطل و بروقت ترسیل کو یقینی بنایا جائے۔

اور ہماری وزیر اعظم پاکستان عمران خان سے اپیل ہے کہ وہ پٹرولیم کا وزیر مقرر کریں کیوں کہ گزشتہ 3ماہ سے باقاعدہ کوئی پٹرولیم کا وزیر موجو د نہیں ہے جس کی وجہ سے حماد اظہر کو ایڈوائزر برائے پٹرولیم مقرر کیا گیا ہے۔

آخر میں تمام پٹرول پمپ مالکان نے کہا کہ ہم ایسوسی ایشن کے ساتھ ہیں اور ہماری کوشش ہو گی کہ ایسوسی ایشن کے ساتھ رہیں  اور اس کے فیصلوں پرمن و عن عمل درآمد کرتے ہوئے 5نومبر سے پٹرول پمپ بند کریں۔

پاکستان پڑولیم ڈیلر ایسوسی ایشن کی جانب سے کراچی پریس کلب میں منعقد ہونے والی پریس کانفرنس میں پاکستان پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے رہنماؤں سینئر رہنماملک خدا بخش،چیف کورآرڈینیٹر پی پی ڈی اے پاکستان طارق حسن،راجا انور،انور کمال، امیر خان محسو د،محمود عالم غوری،عارف محمود،ڈاکٹر شا ہ زیب رند،محمد افضال،سعید خانجی، طارق تنولی سمیت دیگر درجنوں پٹرول پمپ مالکان شریک ہوئے۔

واضح رہے کہ ملک بھر میں  پاکستان پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے نمائندوں  کی جانب سے پریس کانفرنسز کرکے حکومت سیاپیل کی جاچکی ہے،اس سلسلے کی آخری پریس کانفرنس کراچی پریس کلب میں  کی گئی ہے جب کہ اس سلسلے میں  اسلام آباد میں  ملک بھر کے تمام نمائندوں  نے مشترکہ پریس کانفرنس کی تھی اور پڑول پمپ بند کرنے کا اعلان کیا تھا۔

ایک ہفتہ قبل لاہورمیں پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن پنجاب کے صدر عرفان الہیٰ اور سیکرٹری جہاں زیب ملک نے پریس کانفرنس میں اعلان کیا تھا کہ 2013 سے ان کا پرافٹ مارجن نہیں بڑھایاگیا جب کہ ٹیکس،بجلی، مزدوری اور دیگر اخراجات کہاں سے کہاں چلے گئے ہیں۔

مزید پڑھیں: حکومت نے عوام پر یکم نومبر کو نیا پٹرول بم گرانے کی تیاری کرلی، بڑا اضافہ متوقع

ڈیلرزمنافع نہ بڑھنے کی صورت میں کاروبار نہیں کر سکتے، اگر منافع نہ بڑھایا گیا تو 5 نومبر سے ملک بھر میں پیٹرول پمپ بند کر دیں گے۔ان نے یہ بھی اعلان کیا تھا کہ قیمتیں بڑھنے سے قبل ہی آئل کمپنیاں تیل کی فراہمی بند کر دیتی ہیں۔