اداریہ

آزادی مارچ

پاکستان تحریک انصاف مسلم لیگ ن کی زیر قیادت مخلوط حکومت کے ساتھ ٹکراؤ کی راہ پر گامزن ہے۔ اسلام آباد، لاہور اور ملک کے دیگر حصوں میں سڑکوں پر دیکھا جانے والا سیاسی ڈرامہ یہ ظاہر کرتا ہے کہ…

لانگ مارچ اور ممکنہ تصادم

سیاسی بحران اس وقت شدت اختیار کر گیا جب حکومت کی جانب سے تحریک انصاف کے اسلام آباد تک لانگ مارچ سے قبل پی ٹی آئی کے کارکنوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کیا گیا، حکومت کی جانب سے کسی…

عمران کا لانگ مارچ

مخلوط حکومت کو خود کو سنبھالنا چاہیے کیونکہ پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان نے نئے انتخابات کرانے کے لیے 25 مئی کو اسلام آباد میں لانگ مارچ کا اعلان کیا ہے۔ حکام ابھی تک یہ فیصلہ نہیں کرپا…

مزید دیکھیں

کالمز

روس یوکرین تصادم اور تحفظِ خوراک

منیر احمد

دُنیا بھر میں بھوک اور شدید معاشی کساد بازاری پھیلتی جارہی ہے۔ جان بوجھ کر یا غیر ارادی طور پر اس کا ادراک نہ کرتے ہوئے امریکہ یوکرین کو مسلسل فوجی امداد کے ذریعے روس  اور یوکرین کے بحران کو ہوا دیتا نظر آتا ہے۔ گزشتہ ہفتے ایک قانون پر دستخط کے بعد یہ طے ہوا کہ امریکی  صدر جو بائیڈن بھاری فوجی ساز و سامان اور ہتھیاروں کے ساتھ یوکرین کی مدد کے لیے کسی بھی حد تک جا سکتے ہیں۔ یہاں یہ واضح کرنا ض...

 کیا اپوزیشن غیر ملکی سازش میں شریک ہے؟ مختلف سوالات کا جائزہ۔ دوسرا حصہ

عامر خاکوانی

 عمران خان اور ان کے ساتھی بظاہر یہ تاثر دے رہے ہیں کہ چونکہ امریکی ہماری حکومت بدلنا چاہتے ہیں، انہوں نے اس کی دھمکی بھی دی اور اس مراسلہ میں تحریک عدم اعتماد کا حوالہ بھی دیا تو جو لوگ یہ تحریک لا رہے ہیں، وہ امریکیوں کے اس سازش میں پارٹنر اور آلہ کار ہیں۔ یہ اپنی جگہ نہایت سنگین الزام ہے جس کے لئے بہت کمزور دلائل اور ثبوت تحریک انصاف والے پیش کر رہے ہیں۔ عمران خان نے یہ بات کئی بار کی کہ ...

لگژری اشیاء کی درآمد پر پابندی

کمیل سومرو

حکومت نے زوال پذیر معیشت کو فروغ دینے کے لیے \'لگژری\' اشیاء کی درآمد پر پابندی عائد کر دی ہے۔ اس اقدام کو معاشی ماہرین نے بڑے پیمانے پر سراہا ہے اور دعویٰ کیا ہے کہ غیر ضروری اشیاء کی درآمد سے قیمتی غیر ملکی ذخائر کو بچایا جاسکے گا، یہ ہمارے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کو ٹھیک کرے گا اور معیشت کو سہارا دے گا۔ کس چیز کو \'عیش و آرام کی\' چیز سمجھا جاتا ہے؟ معاشیات میں، ایک لگژری آئٹم سے مراد ایک اچھی چی...

پاکستان کا فیصلہ کن لمحہ

محبوب قادر

انسانوں کی زندگی میں ایسے لمحات آیا کرتے ہیں جب افراد، خاندان، معاشرے اور قومیں جلد یا بدیر اپنی زندگی کے دوران کسی دو راہے پر پہنچ جاتی ہیں۔ یہ واقعات کی قوت، زبردست بیرونی ماحول یا طاقتور مقامی عوامل سے ہوتا ہے جو زندگی کی سمت تبدیل کرنے سے تعلق رکھتے ہیں۔ ہمارے معاملے میں دو قوتیں بیک وقت یا شاید مل جل کر بھی متاثر ہوئیں۔ امریکہ اور عمران مخالف ہمدرد قوتیں ساتھ ہیں۔  عمران خان کی قومی خودم...

فساد کی جڑ

رعایت اللہ فاروقی

اس میں تو کوئی دو رائے نہیں کہ ملک مستقل سیاسی بے یقینی کا شکار ہے۔ سوال بس یہ ہے کہ اس بے یقینی کی وجوہات کیا ہیں؟ اگر ہم غور کریں تو 2013ء میں قائم ہونے والی نواز حکومت نے نہ صرف ملک کو اس دور میں درپیش سنگین مسائل سے نکالا تھا بلکہ معیشت کو ایسی بلندی دینی شروع کردی تھی جس پر عالمی ادارے اسے تیز ترین ترقی کرنے والی معیشت قرار دے رہے تھے۔ یہاں تک کہ عالمی ادارے یہ پیشنگوئی بھی کرنے لگے کہ د...

پاکستان میں پانی کا بحران

شیراز ستار

پاکستان کو اس وقت پانی کی شدید قلت کا سامنا ہے جس سے پورا ملک بالخصوص سندھ اور بلوچستان متاثر ہو رہا ہے۔ اگرچہ حکومت کو توقع ہے کہ دریاؤں میں میٹھے پانی کے بہاؤ سے پانی کی کمی جلد دور ہو جائے گی، لیکن اشارے سازگار نہیں ہیں۔ خریف کے موسم کے دوران آبپاشی کے کاموں کے لیے تقریباً 40 فیصد پانی کی کمی تشویشناک ہے کیونکہ اہم فصلوں کی بوائی جاری ہے۔ پانی کی قلت کی یہ حالت اندازے سے بہت زیادہ بدتر ہوتی...

معاشی صورتحال اور تنقید برائے تنقید

ندیم مولوی

تحریکِ انصاف کے چیئرمین عمران خان اور ان کی حکومت کے سابق وزراء آج کل تنقید برائے تنقید میں مصروف ہیں۔ بہتر یہ ہوتا کہ تنقید برائے اصلاح کی جاتی جس سے ملک ترقی کرتا۔ ایک محبِ وطن پاکستانی ہمیشہ یہ چاہے گا کہ پاکستان ترقی کرے اور جو شخص ملک کیلئے کام کرتا ہو، اس کی تعریف کی جائے مگر افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ہمارے ہاں کچھ لوگ ایسے ہیں جو اپنے ہی ملک کو بدنام کرتے ہیں۔ ایسے لوگ تصویر کا و...

پاکستان کی معیشت پر اشرافیہ کا قبضہ

سلمان رشید

اقوام متحدہ کے ترقیاتی پروگرام (یو این ڈی پی) کی پاکستان کے لیے نیشنل ہیومن ڈیولپمنٹ رپورٹ گزشتہ سال اپریل میں جاری کی گئی تھی جس میں اندازہ لگایا گیا ہے کہ پاکستان کے اشرافیہ کے گروپوں کو دی گئی اقتصادی مراعات بشمول کارپوریٹ سیکٹر، جاگیردار، سیاسی طبقے اور فوج، ایک اندازے کے مطابق US$17.4 بلین، یا ملک کی معیشت کا تقریباً 6% ہے۔ یہ ایک حیران کن رقم ہے جس سے پاکستان میں امیر اور غریب کے درمیان ع...

روس یوکرین بحران اور عالمی سپلائی چین

ڈاکٹر محمد شہباز

آج سے 31 سال قبل 1991 میں سوویت یونین (یو ایس ایس آر) کی تحلیل کے بعد یوکرین اور روس کے قریبی تعلقات متاثر ہوتے نظر نہیں آئے۔ 1994 میں، یوکرین نے جوہری ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ کے معاہدے کو ایک غیر جوہری ہتھیاروں سے پاک ریاست کے طور پر تسلیم کرنے پر اتفاق کیا۔  یوکرین میں سابق سوویت ایٹمی ہتھیاروں کو روس سے ہٹا کر ختم کر دیا گیا۔ بدلے میں روس، برطانیہ اور امریکہنے سلامتی کی یقین دہانیوں پر بڈاپس...

مزید دیکھیں