اسلام آباد میں دفعہ 144 نافذ، جلسے جلوسوں پر پابندی عائد

اسلام آباد میں دفعہ 144 نافذ، جلسے جلوسوں پر پابندی عائد

اسلام آباد : حکومت نے پاکستان تحریک انصاف کے لانگ مارچ کو روکنے کا فیصلہ کرلیا، حکومت کی جانب سے اسلام آباد، پنجاب اور سندھ میں دفعہ 144 نافذ کر دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں دو ماہ کیلئے دفعہ 144 نافذ کر دی گئی ہے جس کا نوٹیفکیشن جاری ہو چکا ہے۔ دفعہ 144 کا دائرہ کار ریڈ زون کے ایک کلو میٹر تک بڑھا دیا گیا۔ دفعہ 144 کا دائرہ کار مختلف شاہرات تک بڑھایا گیا، سرینہ چوک، ڈھوکری چوک پر بھی دفعہ 144 نافذ کر دی گئی۔ تھرڈ ایوینیو، سرینگر ہائی وے اور مری روڈ کو بلاک کر دیا گیا جس کے باعث شہری شدید مشکلات کا شکار ہیں۔

دوسری جانب پنجاب حکومت نے بھی پاکستان تحریک انصاف کا لانگ مارچ روکنے کیلئے صوبے بھر میں دفعہ 144 نافذ کردی۔ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما عطا تارڑ نے نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نےجس خونی مارچ کاعندیہ دیا تھا اس کا پہلا شاخسانہ کل لاہورمیں دیکھا، ہمیں اطلاعات تھیں یہ اسلحہ لے کراسلام آباد کا رخ کررہے ہیں، پی ٹی آئی نے ہدایات جاری کیں کہ اسلحے سے لیس ہوکر مارچ میں شامل ہوں۔

یہ بھی پڑھیں:ڈکٹیٹر اور ن لیگ کی حکومت میں کوئی فرق نہیں، عمران خان

عطا تارڑ کا کہنا تھا کہ کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جائےگی، لانگ مارچ کس کیخلاف ہے؟حکومت میں توآپ تھے، کیا لانگ مارچ اپنے خلاف کرنے جارہے ہیں؟،ملک کو تباہ اور معیشت کا بیڑہ غرق آپ نے کیا، یہ عزت سے اقتدار میں آئے اور نہ ہی گئے، پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کا ہدف انتشار پھیلانا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان انا پرست آدمی ہیں، عمران خان چاہتے ہیں اقتدارمیں نہیں رہاتو افراتفری پیدا کروں، 25 مئی کا انتخاب ملک کو نقصان پہنچانے کیلئے کیا گیا، آپ ڈھٹائی کےساتھ انتشار پھیلارہے ہیں۔

قبل ازیں محکمہ داخلہ سندھ نے صوبے بھر میں دفعہ 144 نافذ کردی ہے جس کے تحت سندھ بھر میں جلسے، جلوس، ریلیوں اور عوامی اجتماعات پر مکمل پابندی عائد کر دی گئی ہے، خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف دفعہ 144 کے تحت کاروائی کی جائے گی ۔ محکمہ داخلہ سندھ نے دفعہ 144 کے نفاذ سے متعلق نوٹیفیکیشن جاری کر دیا۔

تبصرے: 0

آپ کا ای میل پتہ شائع نہیں کیا جائے گا۔ مطلوبہ فیلڈز * کے ساتھ نشان زد ہیں