عام آدمی کو کوئی ریلیف نہیں دیا گیا، بلاول بھٹو نے وفاقی بجٹ مسترد کردیا

Reducing Sindh's share by Rs229b amid coronavirus is unfair: Bilawal

کراچی : پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے انتہائی مایوس کن بجٹ پیش کیا ہے، ہم اسے مسترد کرتے ہیں۔

بلاول بھٹوزرداری کے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ان دنوں پاکستان کو تاریخی چیلنجز کا سامنا ہے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے ہر پاکستانی کی زندگی خطرے میں ہے اور اس کے علاوہ 25 سال میں ملک پر ٹڈی کا سب سے بڑا حملہ ہماری زراعت ، خوراک کی حفاظت اور معیشت کے لئے ایک بڑا خطرہ ہے۔

پی پی پی کے چیئرمین نے کہا کہ پی ٹی آئی کے بجٹ کوعوام دشمن ‘پی ٹی آئی ایم ایف بجٹ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت نے ملک کو درپیش چیلنجوں کو کوئی اہمیت نہیں دی اور روایتی بجٹ پیش کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عام آدمی کو کوئی ریلیف نہیں دیا گیا ، دولت مند طبقے کو فائدہ دیا گیا ہے۔ انہوں نے سرکاری ملازمین کے لئے بجٹ میں تنخواہ اور پنشن میں اضافہ نہ کرنے پر بھی تنقید کی۔

انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے دوران بزرگ شہریوں کو بے یارو مدد گار نہیں چھوڑنا چاہیے، حکومت کو پنشن میں اضافہ کرکے انہیں ریلیف دینا چاہئے تھا۔

مزید پڑھیں:کاٹی کے صدر شیخ عمر ریحان نے وفاقی بجٹ کو لفظوں کا گورکھ دھندہ قراردیدیا

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ فرنٹ لائنز پر لڑنے والے طبی عملے کے لئے وفاقی بجٹ میں خصوصی اعلانات ہونے چاہئے تھے لیکن بدقسمتی سے بجٹ میں ایسی کوئی خبرنہیں ملی۔