کراچی تا کشمور سندھ میں کوئی شہری محفوظ نہیں، محمد حسین محنتی

جماعت اسلامی سندھ کے امیر محمد حسین محنتی نے کہا ہے کہ کراچی تا کشمور کسی شہری کی جان، مال،عزت محفوظ نہیں ہے،  قانون نافذ کرنے والے اداروں پر سالانہ اربوں روپے کا بجٹ خرچ ہونے کے باوجود عوام رہزنوں کے ہاتھوں یرغمال ہیں جبکہ حکمران محض بیان بازی اور فوٹو سیشن میں مصروف ہیں۔

اپنے ایک بیان میں محمد حسین محنتی نے کہا کہ سکھر میں ڈکیتی کے دوران مزاحمت پر فائرنگ سے جماعت اسلامی یوتھ کے سرگرم کارکن کریم بخش تنیو کے جاں بحق اور ان کے بھائی کے زخمی ہونے کا واقعہ حکمرانوں کے منہ پر طمانچہ ہے۔

پاکستان کو شکست دینے پر طالبان رہنما کی افغان ٹیم کو مبارکباد

انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ سندھ مقبول باقر کراچی سمیت سندھ بھر میں سماج دشمن عناصر سے شہریوں کی جان و مال کے تحفظ کیلئے مؤثر اقدامات اٹھائیں۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے 15 سالہ سیاہ حکمرانی کے بعد نگراں حکومت میں بھی عوام بے امنی، مہنگائی اور بیروزگاری کے ہاتھوں تنگ آ چکے ہیں۔

جماعت اسلامی کے صوبائی امیر نے مطالبہ کیا کہ کریم بخش تنیو کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کرکے عبرت ناک سزا دی جائے، تاکہ آئندہ اس قسم کے واقعات کا سدباب کیا جا سکے۔