حکومت نے سول ایوی ایشن کے 2حصے کرکے الگ الگ محکمے بنادئیے

موسم

قیمتیں

ٹرانسپورٹ

حکومت نے سول ایوی ایشن کے 2 حصے بنا کر پاکستان ائیرپورٹس اتھارٹی اور سول ایوی ایشن کے محکمے الگ الگ کردئیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق نگران حکومت نے سول ایوی ایشن کے 2 محکموں کا اعلامیہ جاری کردیا جس کے تحت ایئرپورٹوس کو پاکستان اتھارٹی کا حصہ جبکہ لائسنسنگ، فلائٹ اسٹینڈرڈ اور ائیر ٹرانسپورٹ سمیت دیگر شعبہ جات سول ایوی ایشن کے سپرد کیے گئے ہیں۔

حکومتی اعلامیے کے مطابق سول ایوی ایشن اتھارٹی اور پاکستان ائیرپورٹس اتھارٹی ایکٹ 2023نافذ کیا گیا ہے جبکہ دونوں محکموں کی سربراہی بھی الگ الگ شخصیات کو دی جائے گی جبکہ یہ کارروائی عالمی سول ایوی ایشن آرگنائزیشن کی ہدایت پر کی گئی ہے۔

عالمی سول ایوی ایشن نے نگران حکومت کو ریگولیٹری اور ائیرپورٹ سروس توڑ کر 2 نئے محکموں کی تشکیل کی ہدایت کی تھی۔ نگران حکومت نے پاکستان ائیرپورٹ اتھارٹی اور سول ایوی ایشن کے ایکٹس کو 10 نومبر سے نافذ کردیا ہے۔نوٹیفکیشن وزارتِ ہوابازی نے جاری کیا۔

نوٹیفکیشن میں حکم دیا گیا ہے کہ ائیرپورٹس اتھارٹی اور سی اے اے سے ملازمین کی تعداد اور اثاثوں سمیت دیگر تفصیلات فوراً سامنے لائی جائیں۔ قبل ازیں حکومت سی اے اے اور ائیرپورٹ اتھارٹی کے 2 الگ محکمے الگ کرنے کے ایکٹ پارلیمنٹ سے منظور کروا چکی تھی۔