اشرافیہ کے اثاثے بیچ کر ملکی قرضے اتارے جائیں، سراج الحق

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ اشرافیہ کے اثاثے بیچ کر ملک کے قرضے اتارے جانے چاہئیں۔

کوئٹہ میں احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا کہ 75 سال گزرنے کے باوجود انگریزوں کا قانون آج بھی موجود ہے۔ آج مہنگائی کی وجہ سے 25 کروڑ عوام کیلئے گھر چلانا مشکل ہو چکا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:

سعودی بچوں نے قومی دن کیسے منایا، دیکھئے تصاویر کے آئینے میں

آٹا، چینی، دالیں ایسے مہنگی ہوئی ہیں جیسے یہ چاند سے لے کر آتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت چاند کے بعد سورج کی جانب جا رہا ہے لیکن پاکستان کے عوام آٹے اور چینی کیلئے سڑکوں پر ہیں۔
سراج الحق کا مزید کہنا تھا کہ ہماری اس تحریک کا مقصد ظلم اور جبر کے خلاف جہاد ہے۔ آئی ایم ایف کے قرضے حکمرانوں نے لیے لیکن یہ قرض عوام سے لیا جا رہا ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ دنیا میں سال میں ایک بجٹ جبکہ پاکستان واحد ملک ہے جہاں 365 روز بجٹ پیش کیے جاتے ہیں۔

ملک میں سستی بجلی پیدا کی جا سکتی ہے لیکن مہنگا تیل خرید کر عوام کیلئے بجلی مہنگی کی جاتی ہے۔ پاکستان میں بجلی 5 روپے فی یونٹ مل سکتی ہے لیکن حکمرانوں کی پالیسیوں کی وجہ سے 56 روپے یونٹ ملتی ہے۔