کینیڈا میں پاکستانی نژاد خاندان کو گاڑی سے کچلنے والا دہشتگرد قرار

موسم

قیمتیں

ٹرانسپورٹ

اونٹاریو: کینیڈا میں ایک ہی پاکستانی نژاد خاندان کے 4 افراد کو گاڑی تلے کچل کر قتل کرنے والے شخص کو دہشت گرد قرار دے دیا گیا ہے۔ نیو یارک ٹائمز کا کہنا ہے جواں سال مجرم نے سفید فام تعصب کے تحت یہ اقدام اٹھایا۔

تفصیلات کے مطابق جمعرات کے روز کینیڈین جج نے یہ فیصلہ سنایا کہ جوان العمر مجرم کا یہ اقدام دہشت گردی ہے کہ اس نے اپنے ٹرک کو جون 2021 میں مسلم خاندان کے 5افراد پر چڑھادیا جن میں سے 4جاں بحق جبکہ 1 زخمی ہوگیا تھا۔

اونٹاریو کی سپیرئیر کورٹ آف جسٹس کے جج جسٹس رینی پومرنس نے یہ فیصلہ سنایا اور 23 سالہ مجرم نیتھنیل ویلٹمین کو افضال خاندان کے 4افراد کے قتل کا ذمہ دار قرار دیا جس نے اونٹاریو کے شہر لندن میں جان بوجھ کر 5افراد کو ٹرک سے کچلا۔

عدالت نے قراردیا کہ مجرم نے جان بوجھ کر یہ اقدام اٹھایا جس کے باعث کینیڈا کی تاریخ میں پہلی بار دہشت گردی کے قانون کا اطلاق کردیا گیا۔ عدالت نے نیتھنیل ویلٹمین کو گزشتہ برس نومبر کے دوران ہی اقدامِ قتل پر چاروں مسلمان افراد کا قاتل قرار دے دیا تھا۔

جرم کے تحت 23سالہ ملزم کو پیرول کے بغیر 25سال عمر قید کی سزا دے دی گئی۔ واضح رہے کہ جاں بحق افراد میں سے 46سالہ سلمان فزیو تھراپسٹ، 44سالہ اہلیہ پی ایچ ڈی اسکالر تھیں۔ واقعے میں ان کی 74سالہ والدہ اور 15سالہ بیٹی بھی جاں بحق جبکہ ایک بچہ زخمی ہوا۔