اہداف پر عملدرآمد مکمل، آئی ایم ایف پروگرام 6 ارب ڈالر کا ہوگا

موسم

قیمتیں

ٹرانسپورٹ

اسلام آباد: عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے 26 میں سے 25 اہداف پر عملدرآمد مکمل کر لیا گیا، حکام کو عالمی ادارے سے 6ارب ڈالر کا پروگرام ملنے کی توقع ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسٹیٹ بینک نے حکومت کیلئے قرض نہ لینے اور بیرونی ادائیگی بر وقت کرنے، ٹیکس استثنیٰ اور ایمنسٹی اسکیم نہ دینے کے ساتھ ساتھ کرنسی ایکسچینج ریٹ میں 1.25فیصد کے ریٹ پر عمل کیا۔ وزارتِ خزانہ کی رپورٹ آئی ایم ایف کو ارسال کردی گئی۔

دوسری جانب وزارتِ خزانہ نے آئی ایم ایف کے ساتھ نئے قرض پروگرام کے اہم اہداف طے کرلیے ہیں جن کے مطابق 6ارب ڈالر کا نیا پروگرام 3سالہ مدت کا ہوگا جس کیلئے وزارتِ خزانہ اور ایف بی آر حکام مسلسل رابطے میں ہیں۔ بجٹ خسارہ کم کیا جائے گا۔

وفاقی وزارتِ خزانہ کا نجی ٹی وی رپورٹ کے دعوے کے مطابق کہنا ہے کہ بجٹ خسارے میں کمی اور پرائمری بیلنس سرپلس رکھنے کا ہدف طے کر لیا گیا ہے۔ آئندہ بجٹ میں سبسڈی  کا تعین بھی نئے قرض پروگرام کی شرائط کے تحت کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا۔

ایک رپورٹ کے مطاق آئندہ مالی سال کے دوران پاکستان کو اپنا بجٹ آئی ایم ایف کی شرائط کے تحت تشکیل دینا ہوگا جبکہ نگران حکومت نئی حکومت کیلئے معاشی روڈ میپ اور قرض پروگرام کی ورکنگ تیار کرچکی ہے۔