ڈیفالٹ کے خدشات دور،آئی ایم ایف جائزہ مشن آئندہ ماہ پاکستان کا دورہ کرے گا

آئی ایم ایف

اسلام آباد: ڈیفالٹ کے خدشات دور ہونے لگے، آئی ایم ایف کا جائزہ مشن آئندہ ماہ پاکستان کے دورے کیلئے تیار ہے جسے 8 فروری کو ہونے والے عام انتخابات اور نئی حکومت کی تشکیل سے مشروط کیا گیا تھا۔

نئی حکومت تشکیل دینے کیلئے مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی سمیت دیگر سیاسی جماعتوں میں سیاسی روابط اور جوڑ توڑ کا سلسلہ جاری ہے۔ آئی ایم ایف کا وفد رواں ماہ کے آخر تک اسلام آباد کے دورے کیلئے آئے گا جس سے اسٹینڈ بائی ارینجمنٹ کی تکمیل متوقع ہے۔

رواں برس 12اپریل کے روز پاکستان کیلئے 3 ارب ڈالرز کا اسٹینڈ بائی ارینجمنٹ کا آئی ایم ایف پروگرام تکمیل کو پہنچنے والا ہے۔ بعد ازاں وسط مدتی بیل آؤٹ پیکیج کو حتمی شکل دئیے جانے کا امکان ہے جس سے بیرونی قرضوں کی واپسی میں آسانی ہوگی۔

بیرونی قرض کی بر وقت ادائیگی نہ کرنے کے باعث ڈیفالٹ کے خدشات سے بچنے کیلئے آئی ایم ایف اسٹینڈ بائی ارینجمنٹ کی کافی اہمیت ہے جبکہ 1.2ارب ڈالرز مالیت کے دوسرے آئی ایم ایف جائزہ مشن کی تکمیل اور آخری قسط کے اجراء میں تاخیر کا بھی خدشہ ہے۔

تاخیر کی صورت میں آئندہ چند ماہ وفاقی حکومت کیلئے مشکل ثابت ہوسکتے ہیں جس سے اقتصادی سطح پر ڈیفالٹ کے خدشات ایک بار پھر جنم لے سکتے ہیں۔ اسٹیٹ بینک ذخائر میں پہلے ہی 173ملین ڈالرز کی کمی ہوچکی ہے جو ساڑھے 8ارب ڈالرز کے لگ بھگ ہیں۔

تبصرے: 0

آپ کا ای میل پتہ شائع نہیں کیا جائے گا۔ مطلوبہ فیلڈز * کے ساتھ نشان زد ہیں